چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کے نفاذ کا مقصد ان بچوں کو انصاف دلانا ہے

0

- Advertisement -

کوئٹہ 10فروری :۔صوبائی وزیر سوشل ویلفیئر و انسانی حقوق میر اسداللہ بلوچ نے کہا ہے کہ چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کے نفاذ کا مقصد ان بچوں کو انصاف دلانا ہے جو جنسی و جسمانی استحصال,احساس محرومی اور ظلم و جبر کے شکار ہیں۔اس ایکٹ کے ذریعے معاشرتی ناہمواری اور نا انصافی کا خاتمہ ہوجائے گا- ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ اور یونیسف کے تعاون سے کوئٹہ میں چائلڈ پروٹیکشن یونٹ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا- تقریب میں سیکرٹری سوشل ویلفیئر عبدالرو¿ف بلوچ , یونیسیف کے ملکی نمائندہ ایڈا گریما سابق وفاقی وزیر روشن خورشید بروچہ, ڈی- جی سوشل ویلفیئر احسن اللہ ,دیگر محکموں کے افسران,غیر سرکاری تنظیموں اور سول سوسائٹی کے نمائندوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔ افتتاحی تقریب کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئےصوبائی وزیر نے 2016 میں پاس کیے گئے چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کے نفاذ پر مسرت کا اظہار کیا اور کہا کہ اس کا نفاذ سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ ساتھ یونیسیف کی خصوصی اور اہم کردار کی وجہ سے ممکن ہوا- جس کے تعاون کے شکرگزار ہیں صوبائی وزیر میر اسداللہ بلوچ کا مزید کہنا تھا کہ بچوں کو تحفظ دینا ہمارا اسلامی و قومی فریضہ ہے۔ اس میں سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ ساتھ محکمہ صحت, محکمہ تعلیم, لیبر ڈیپارٹمنٹ, سول سوسائٹی اور والدین کو بھی اپنا اپنا کردار ادا کرنا چاہیے- ان کا کہنا تھا کہ جن معاشروں میں بچوں کے حقوق کو اہمیت نہیں دی جاتی -وہاں بچے جرائم پیشہ افراد کے ہتھے چڑھتے ہیں جوکہ پورے معاشرے کو بری طرح متاثر کرتے ہیں لہذا ضرورت اس امر کی ہے- کہ صاحب اختیار,صاحب حیثیت اور پالیسی بنانے والے افراد کو انفرادی اور شخصی مفادات سے بالا تر ہو کر پورے معاشرے کے لیے سوچنا ہوگا۔ تاکہ معاشرتی برائیوںسے پاک ایک مثالی معاشرہ بنایاجاسکے- سیکریٹری سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ عبدالرو¿ف بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا- کہ سوشل ویلفیئر یونیسیف کے ساتھ مل کر بچوں کو بنیادی حقوق کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن کوشش کر رہا ہے-جس میں معاشرے کے تمام اسٹیک ہولڈرز کا تعاون ہمیں درکار ہوگا- اس موقع پر یونیسیف کے ملکی نمائندہ ایڈا گریما نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں یونیسف کی جانب سے بچوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے ہر ممکن تعاون جاری رہے گا۔ اور حکومت بلوچستان کو چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کے نفاذ پر مبارکباد پیش کی ۔اس موقع پر دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کا پورے بلوچستان میں موثر نفاذ کے لئے دیگر اضلاع میں بھی چائلڈ پروٹیکشن یونٹ جلدازجلد کھولیں جائینگے۔ تاکہ بچوں کو ہر ممکن معاشرتی انصاف دلایا جا سکے۔ تقریب کے اختتام پر صوبائی وزیر میر اسد اللہ بلوچ نے یونیسیف کے ملکی نمائندہ ایڈا گریما, ودیگر میں شیلڈ بھی تقسیم کیے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.