آزادی مارچ کے بعد پلان بی ،قومی شاہرائیں آمد ورفت کیلئے بند عوامی مشکلات میں اضافہ

0

- Advertisement -

 

آزادی مارچ کے بعد پلان بی کے جمعیت علماءاسلام نصیرآباد کے کارکنوں کا جمعیت علماءاسلام کے صوبائی امیر مولانا عبدالواسع اورصوبائی ڈپٹی جنرل سیکریٹری حاجی نظام الدین لہڑی کی قیادت میںتحت سندھ بلوچستان قومی شاہراہ کو ربیع کینال کے مقام پر دھرنا دیکر بند کردیا ٹریفک کی آمدورفت معطل ہوگئی جس کے باعث ٹریفک کی آمدورفت معطل ہوکررہ گئی ہے دھرنے میں نیشنل پارٹی نے بھی شرکت کی مظاہرین وزیراعظم پاکستان کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے قومی شاہراہ بلاک ہونے کے باعث ہزاروں گاڑیوں کی لائنیں لگ گئیں خواتین بچوں اوربزرگ مسافروں کو سخت مشکلات کا سامنا کرناپڑاکسی بھی ناخوشگوارواقعے سے نمٹنے کےلئے پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی تھی مغرب کے بعددھرنے کے شرکاءنے دھرنا ختم کرکے ٹریفک کی آمدورفت کو بحال کردیا مظاہرین نے سندھ بلوچستان قومی پرشاہرہ پر تین نمازیں باجماعت سے اداکیں دھرنے کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے رکن قومی اسمبلی و جمعیت کے صوبائی امیر مولانا عبدالواسع نے کہاکہ آزادی مارچ کا دھرنا ملک کی تاریخ کا سب سے بڑادھرنا تھاپاکستانی میڈیاسمیت عالمی میڈیا کے بھی دھرنے کا سراہایاانہوںنے کہاکہ اپوزیشن کی نوتمام جماعتیں حکومت کے خاتمے کے لئے سب متحد اوریکجہ ہیں ہم نے آزادی مارچ میں بھر پور کامیابیاں حاصل کیں ہیں 75سال میں کسی نے اتنی کامیابیاں حاصل نہیں کیںجنتی ہم نے آزادی مارچ میں حاصل کی ہیں انہوںنے کہاکہ عمران خان نے دھرنے میں امپائر کی انگلی کا اشارہ دیاتھامگرہم کسی امپائر کے اشارے کے منتظر نہیں تھے ہمارا مپائرعوام ہے ا نہوںنے کہاکہ تحریکیں جب چلتی ہیں تو عوام کی راہیں ہموارکرنا ہوتی ہیں عوام کو اپنے ساتھ لیکرچلناہوتا ہے پھر ان نااہل حکومتوں کو عوام کی طاقت سے ختم کیا جاسکتا ہے انہوںنے کہاکہ ہم تمام اپوزیشن کے شکرگزارہیں جنہوںنے ہماری تحریک میں ساتھ دیا دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے دیگرمقرین صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری حاجی نظام الدین لہڑی، ایم پی اے اصغر علی،ایم پی اے حاجی احمد نواز کاکڑ، مولاناارشد شاہ،ضلعی امیر مولانا بشیراحمد جمالی،ضلعی نائب امیر حاجی محمد بخش بنگلزئی، تحصیل ڈیرہ مرادجمالی کے امیرحاجی رحمت اللہ بنگلزئی،سابق ضلعی امیر مولانا عبداللہ جتک ،مولاناغلام قادر ،عبدالقیوم رند،نیشنل پارٹی کے ضلعی صدرجاگن خان ،عبدالستاربنگلزئی،ڈاکٹر غلام سرورمغیری، نذیرنازسمیت دیگر مقرین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آزادی مارچ کے کامیابی کے بعد اب ان شاءاللہ پلان بی بھی بھرپور انداز میں جاری ہے سیلیکٹڈ حکومت کا خاتمہ کرکے عمران نیازی کو گھر بھیج کر رہیں گے انہوں نے کہاکہ ہمارا پرامن احتجاج ہے جو بھی فیصلہ ہوگا رہبر کمیٹی کے مطابق ہونگے تمام اپوزیشن جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر متحد اور منظم ہیں دھرنا مرکزی کال پر کیا گیا ہے مرکزی قائدین کے فیصلے تک دھرنا جاری رہے گا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.