منشیات کی روک تھام کیلئے ہرفرد کو کردار ادا کرنا ہوگا ، میر اسدبلوچ

صوبائی وزیر سوشل ویلفیئر میر اسد اللہ بلوچ نے کہا ہے کہ منشیات کی روک تھام کے لیے ہمیں بحیثیت ذمہ دار شہری اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ منشیات زہر قاتل ہے جو ہماری نوجوان نسل کو تباہی اور بربادی کی طرف لے جارہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ علاج و بحالی مریضان منشیات محکمہ بہبود آبادی حکومت بلوچستان کے زیر اہتمام عالمی یوم انسداد منشیات کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل بہبود آبادی مسرت جبین ، ڈی ڈی اینٹی نارکو ٹیکس دلاور خان اور دیگر بھی موجو دتھے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ منشیات صرف ایک فرد یا ایک معاشرے کو نہیںبلکہ پوری ایک نسل اور قوم کو تباہ کرتی ہے۔ اس زہر کے استعمال سے انسان انسانیت بھول کر حیوانیت کا روپ دھار لیتا ہے ۔ اس لیئے اس دن کو منانے کا مقصد عوام میں منشیات کے حوالے سے آگاہی پیدا کرنا ہے۔ اور اس کی روک تھام کے سلسلے میں ایسے اقدامات اٹھانے کی کوشش کرنا ہے کہ ہم بحیثیت قوم اس زہر سے مکمل طور پر نجات حاصل کر سکیں ۔ انہوں نے کہا کہ منشیات میں مبتلا افراد کے علاج ومعالجہ کےلئے اقدامات کئے جارہے ہیں تاکہ ان افراد کو منشیات کی لت سے چھٹکارہ دلا کر معاشرہ کا کار آمد شہری بنائیں۔ انہوںنے نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان کو منشیات کے عادی افراد کی نہیںبلکہ ڈاکٹر ز، انجینئر ز اور دانشوروں کی ضرورت ہے۔ منشیات کی لت سے معاشرے کو پاک کرنے کیلئے معاشرے کی تمام اکائیوں علما کرام ، اساتذہ ، والدین اور دیگر افراد کو خصوصی کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوںنے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ منشیات کے عادی افراد کے معاشرے میں انکے جائز مقام دلانے اور نفرت کرنے کا رواج ختم کریں ۔ اس موقع پر صوبائی وزیر نے ڈائریکٹر ادارہ بحالی جاوید بلوچ کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے منشیات کے عادی مریضوں کے علاج ومعالجہ کیلئے ایک لاکھ روپے کا اعلان کیا ۔ اور ساتھ ہی انہوںنے پنجگور ، لسبیلہ اور لورالائی میں بھی ایسے ادارے بنانے کا عندیہ دیا جبکہ ادار ے کے مسائل کی جلد از جلد حل کی یقین دہانی کرائی۔ تقریب کے اختتام پر صوبائی وزیر مریضوں سے گھل مل گئے اور بعد ازاں نے صوبائی وزیرمیر اسد اللہ بلوچ کو ڈائریکٹر ادارہ بحالی جاوید بلوچ نے شیلڈ بھی پیش کیا۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close