بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال پہلے سے کافی بہتر ہے ،میر ضیاء اللہ خان لانگو

0

خضدار(این این آئی)وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیاء اللہ خان لانگو نے کہا ہے کہ بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال پہلے سے کافی بہتر ہے مثالی

- Advertisement -

امن قائم کرنے میں دیگر فورسیز کے ساتھ لیویز فورس کی قربانیاں بھی شامل ہیں
،لیویز فورس بلوچستان میںایک روایتی و سیکورٹی نبہانے کی جدید صلاحیتوں سے لیس فورس بن کر ابھر رہی ہے جوموجودہ حالات سے ہم آہنگ ہو کر سی پیک روٹ اور سوشل اکنامکس اسکیمات کی حفاظت کی حفاظت نبہانے کے کی ذمہ داری بھی ادا کررہی ہے۔ بلوچستان کے اس روایتی فورس کی قربانیاں نا قابل فراموش ہیں ،خواتین کی لیویز فورس میں شامل ہونا خوش آئندہ اور لیویز فورس کی بہادری کا بین ثبوت ہے ۔وزیراعلیٰ بلوچستان کا وژن ہے کہ لیویز فورس کے مسائل ترجحی بنیادوں پر حل کیئے جائیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے لیویز ٹریننگ سینٹر خضدار میں ضلع خضدار ،ضلع آواران ،ضلع بولان ،ضلع پنجگور اور ضلع آواران کے پاس آوٹ ہونے والے لیویز فورس کے جوانوں کی پاسنگ آوٹ پریڈ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب میں کل 391 جوان پاس آوٹ ہوئے جن میں کیو آر ایف کی چار خواتیں اہلکار بھی شامل تھیں تقریب سے کمشنر قلات ڈویژن حافظ طاہر ،ڈائریکٹر جنرل لیویز فورس بلوچستان مجیب الرحمن قمبرانی ،ا ے ڈی سی خضدار عبدالقدوس اچکزئی ،محمد امین شاہ ،جے یوآئی خضدار کے جنر ل سیکریٹری مولانا عنایت اللہ رودینی ، جماعت اسلامی کے صوبائی رہنماء مولانا محمد اسلم گزگی ، بی این پی کے حاجی محمد اقبال لانگو،قبائلی سربراہان سردار مہر اللہ خان قمبرانی ، سردار محمد حیات ساجدی ، سردار نصراللہ خان ساسولی ،بی اے پی کے رہنماء بشیراحمد جتک، سمیت سیاسی و قبائلی عماہدین بڑی تعداد میں موجود تھے تقریب سے کمشنر قلات ڈویژن اور ڈی جی لیویز فورس نے بھی خطاب کیا وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیاء اللہ خان لانگو نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ فورسز کی قربانیاں ہیں کہ آج بلوچستان میں لوگ پر امن زندگی گزار رہے ہیں ان قربانیوں میں لیویز فورس کے جوانون کی قربانیاں بھی شامل ہیں لیویز فورس بلوچستان کا سب سے قدیم اور بلوچستان کی در و دیواروں سے واقفیت رکھنی والی فورس ہے اس فورس کو موجودہ حکومت نے جدید تقاضوں کی عین مطابق تیار کر چکی ہے تیس ہزار لیویز اہلکار بلوچستان بھر میں امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے میں خدمات سر انجام دے رہی ہیں آج جدید تربیت حاصل کر کے پاس آوٹ ہونے والے جوانوں کی پیشہ آورانہ صلاحیتوں کو دیکھ مجھے فخر محسوس ہو رہا ہے کہ لیویز فورس کی جوانوں کی تربیت کسی بھی فورس کے جوانوں سے کم نہیں اس کے لئے ڈی جی لیویز فورس ،کمانڈنٹ ٹریننگ سینٹر کو میں مبارکباد دیتا ہوں کمشنر قلات ڈویژن حافظ طاہر نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جھالاوان کے عوام تمام فورسیز باالخصوص لیویز فورس کے جوانوں کی مرہون منت ہے کہ ان جوانوں نے اپنی جانوں کا نظرانہ پیش کر کے یہاں امن و امان کی بحالی میں اپنا کردار ادا کیا ّآج میں یہ بات فخریہ طور پر کہتا ہوں کہ لیویز فورس کے جوان انسداد دہشت گردی ،سرچ آپریشن میں کافی مہارت حاصل کر چکے ہیں اور کسی بھی جگہ پولیس و ایف سی کے شانہ بشانہ ہو کر ملک کا دفاع کرنے کی صلاحیت اور ضرورت پڑنے پر مسلح افواج کے بھی شانہ بشانہ ہونگے ڈی جی لیویز فورس مجیب الرحمن قمبرانی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لیویز فورس میں مختلف ونگز بنائے گئے ہیں جن میں سی پیک ونگ ،سوشو اکنامکس ونگ ،انوسٹی گیشن ونگ ،کویئک رسپانس فورس ونگ و دیگر شامل ہیں اور سی پیک ونگ بلوچستان سے گزرنے والی سی پیک شاہراہ کی حفاظت پر معمور ہو گا سوشو اکنامکس ونگ بلوچستان میں ترقیاتی اسکیمات کی حفاظت پر معمور ہو گی اور کوئیک رسپانس فورس کسی بھی ممکنہ صورتحال سے نمٹنے کے لئے کوئیک رسپانس دے گی انوسٹٰگیشن ونگ ایک ونگ ہو گا تیس ہزار سے زائد جوان اس وقت بلوچستان بھر میں تعینات ہیں انہوں نے کہا کہ 150سالہ تاریخ رکھنے والی فورس لیویز فورس اب جدید خطوط پر استوار ہو چکا ہے تقریب کے اختتام پر ڈھائی ماہ کی ٹریننگ کے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے جوانوں میں انعقامات تقسیم کئے جبکہ جوانوں سے اجتماعی حلف بھی لیا گیا جوانوں کو تین پلاٹونوں میں تقسیم کیا گیا تھا جسن میں شہید کیپٹن طارق زہری پلاٹون ،شہید منصور کاکڑ پلاٹون اور سید عبدالوحید شاہ پلاٹون شامل تھے اس سے قبل لیویز فورس کی چاک و چوبند دستے نے صوبائی وزیر کو سلامی پیش اس موقع پر لیویز فورس کے جوانوں نے کمال مہارت سے پیشہ ورانہ صلاحیتوں کا بھی مظاہرہ کرکے حاضرین سے کوب داد وصول کی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.