خضدار:ٹیچنگ ہسپتال میں ادویات کا فقدان‘عوام رل گئے

ٹیچنگ ہسپتال خضدار بدترین انتظامی کمزوریوں ادویات نہ ہونے کی وجہ سے غریب و بے سہارا عوام کے لئے سوگنے کی چیز بن گئی ہے سول ہسپتال خضدار کا انتظامی ذمہ دار کا ہسپتال کے مسائل سے کوئی سروئے کار ہے خضدار ہسپتال میں جانے والے ان ڈور یا آﺅٹ ڈور مریض کو آپریشن کا دہاگہ اور سوئی معمولی ٹیبل بھی با ہر سے لانا پڑتا ہے جس کی وجہ سے لا وارث مریض اکثر جان کی بازی ہار جاتے ہیں قدرتی حادثات میں ہلاکتوں کی ایک وجہ زخمیوں کو بر وقت علاج و معالج کی مناسب سہولت نہیں ملنا ہوتا ہے جبکہ ہسپتال میں کام کرنے والے معالج بھی ہسپتال میں ڈیوٹی پر کوئی توجہ ہر گز نہیں دیتے ہیں وہ ایک سرسری نگا ہ ڈالنے کے لئے آتے ہیں ہسپتال کے درو دیور پر اور خا ص پر لیڈی ڈاکڑوں کا رویہ مریضوں سے غیر شائستہ ہو تا ہے ا انتظامی امور کو سنبھالنا ڈاکڑوں و دیگر عملہ کو ڈیوٹی کے لئے بر وقت پا بند کرنا انتظامی سر براہ کی ذمہ داری ہوتی ہے لیکن سول ہسپتال خضدار کا انتظامی ذمہ دار کا مطع نظر صرف اس کرسی پر بیٹھنا ہوتا ہے دوسری جانب ڈاکٹروں کے نسخہ جات میں بھی بد ترین اخلاقی گراوٹ دیکھنے میں آتی ہے ہر ڈاکٹر لکھے گئے نسخہ کا ایک مخصوص میڈیکل اسٹور ہوتا ہے یہ ادویات عام میڈیکلوں پر ہر گز نہیں ملتے ٹیچنگ ہسپتال خضدار میں صفائی کا نظام ابتر ہے جس کی وجہ سے طہارت خا نوں میں غلا ظتوں کے ڈہیر لگے ہیں جبکہ پورے ہسپتال میں نا قص صفائی کی وجہ سے گندگیوں و کچروں کے ڈہیر ہیں ہسپتال میں پینے اور دیگر ضروریات کے لئے پانی ناپید ہے مریض ادویات کی طرح پانی بھی قیمت دیکر حاصل کرتے ہیں

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close