آصف علی زداری کے گرفتاری

آصف علی زداری کے گرفتاری سے حکومت مخالف تحریک مزید مضبوط ہوگی۔حکمرانوں کی بوکھلاہٹ کی وجہ سے ملکی معیشت تباہ و برباد ہو چکی ہے۔پیپلز پارٹی کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑی ہے۔آصف علی ذرداری کی گرفتاری کوئی نئی بات نہیں۔پاکستان کی واحد سیاستدان آصف ذرداری ہے جس نے 11 سال جیل میں گزاری اور اس پر کوئی جرم ثابت نہیں ہوا تمام الزامات جھوٹے ثابت ہوئے اور ان تمام مقدمات سے سرخ روح ہو کر آصف ذرداری باعزت بری ہوئے۔آج اسکے گرفتاری سے یہ بات عیاں ہوا ہے کہ حکمران پیپلز پارٹی کی نوجوان قیادت بلاول بھٹو سے انتہائی خوف ذرہ ہیں۔حکمران آصف زداری کو گرفتار کرکے بلاول بھٹو سے ڈیل کرنا چاہتے ہیں مگر طفیلی حکمرانوں کے مقدر میں ناکامی و نا مرادی لکھا ہوا ہے۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان پیپلز پارٹی قلات ڈویژن کے صدر نعیم بلوچ نے آصف علی ذرداری کے گرفتاری پر ردعمل دیتے ہوئے کہا آصف ذرداری کے گرفتاری کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔نیب اپوزیشن رہنمائوں کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا رہا ہے۔آج آصف ذرداری کو اس کیس میں گرفتار کیا جا رہا ہے جس میں آصف ذرداری ملزم ہی نہیں ہے اور براہ راست اسکا نام ہی نہیں ہے۔لگتا ایسا ہے کہ نیب گردی عروج پر ہے۔وہ دن دور نہیں چیئرمین نیب کو سیف الرحمان کی طرح آصف ذرداری کے پائوں پر گرنا پڑے۔پاکستان پیپلز پارٹی کی جیالوں کے حوصلے انتہائی بلند ہیں۔وہ کسی بھی انتقامی بنیادوں پر کی گئی کاروائیوں سے گھبرائے والے نہیں۔پاکستان کی عوام نادیدہ قوتوں کے سلیکٹڈ حکمرانوں کے خلاف جلد ہی میدان عمل میں اترنے والے ہیں۔پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت کسی کی بلیک میلنگ میں نہیں آئے گی۔اگر یہ روش جاری رہا تو ملکی سلامتی کو شدید خطرات کا سامنا کرنا پڑے گا۔جو فیصلہ عوام پر بطور طاقت مسلط کیا جاتا ہے تو اسکے منفی اثرات سامنے آجاتے ہیں۔حکمران ملکی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کے بجائے فوری طور پر مستعفی ہو کر عام انتخابات کا اعلان کریں۔

Tags

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close