بلوچستان نیشنل پارٹی کرسچن ٹاﺅن سمنگلی روڈ یونٹ کے زیر اہتمام پریس کلب کوئٹہ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا

بلوچستان نیشنل پارٹی کرسچن ٹاﺅن سمنگلی روڈ یونٹ کے زیر اہتمام پریس کلب کوئٹہ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ، مظاہرین نے حکومت وقت کی جانب سے اپنے کمیونٹی کے ساتھ ناانصافیوں کے خلاف پلے کارڈز اور بینرز اٹھارکھے تھے ، اور نعرے بازی کی ۔ اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے بی این پی کرسچن یونٹ کے رہنماﺅں احتشام مسیح، عشرت جاوید ، پرویز مسیح و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت میں شامل اقلیتوں کا نام نہاد نمائندہ نے اقلیتوں کے مذہبی تہوار کے نام پر حاصل کرنے والے فنڈز اپنے منظور نظر و پسند لوگوں میں تقسیم کیا جو کہ ہمارے کمیونٹی کے ساتھ سراسر ناانصافی اور زیادتی ہے ۔ ایستر کے موقع پر مسیحی برادری کے لئے جو فنڈ منظور کیا گیا اس میں ہمارے پارٹی کے ایم پی اے ٹائٹس جانسن نے اہم کردار ادا کیا اور حقیقی مستحقین کے لئے فنڈز منظور کرائی لےکن حکومت میں شامل اقلیتی نمائندے نے غریب مسیحیوں کے نام پر فنڈ نکال کر اپنے منظور لوگوں میں تقسیم کیااوریہ ایک سازش کے تحت کیا جارہا ہے تاکہ صوبے میں آباد اقلیتوں کے درمیان نفرتیں اور تعصب کی فضاءقائم کی جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ بی این پی کے ایم پی اے نے اپنے مختصر دورانیہ میں ہمیشہ کوشش کیا ہے کہ مسیحی برادری کے حقیقی متاثرین کو مذہبی تہوار کے ایام میں خصوصی ریلیف مل سکے لےکن ایک مخصوص نمائندے نے مسیحوں کمیونٹی کی بنیادی حقوق کا احترام نہیں کیا اور 25لاکھ فنڈز ریلیز ہوا ان میں مسیحی کمیونٹی کو مکمل طور پر نظر انداز اور محروم رکھا گیا جس کے نتیجے میں ہمارے کمیونٹی میں احساس محرومی پائی جاتی ہے اور اس ناانصافی کے خلاف ہر سطح پر سیاسی و جمہوری انداز میں آواز بلند کرتے رہیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مسیحی کمیونٹی کے لئے ایم پی اے ٹائٹس جانسن نے پینے کے پانی کے سلسلے میں ٹیوب ویل منظور کروائے لےکن آج ان منظور شدہ ٹیوب ویلوں کو بھی حکومت میں شامل ایم پی اے اپنے کھاتے میں ڈالتے ہوئے اپنے لوگوں کے نام کروارہے ہیں ۔ ہونا تو یہ چاہےے تھا کہ حکومت میں شامل اقلیتی نمائندے تمام اقلیتوں کو برابری اور مساوی بنیاد پر مذہبی تہوار کے فنڈز تقسیم کرتے اور ان میں تقسیم اور اختلافات پیدا کرنے کی کوشش نہ کرتے لےکن موجودہ حکومتی ایم پی اے کے رویہ سے یہاں پر آباد مذہبی اقلیتوں میں مسائل اور مشکلات پیدا ہورہے ہیں ان مسائل ، مشکلات اور سازشوں کو کسی بھی صورت میں کامیاب نہیں ہونے دیں گے اور حکومت وقت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ایستر کے موقع پر نکالے گئے 25 لاکھ فنڈز کی تحقیقات کرائے ۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close