کوئٹہ :صوبے میں لیویز کے پاس 90 فی صد حصہ ہے، ثنابلوچ

Related Articles

One Comment

  1. ارباب اختیار اور وزہراعلی بلوچستان سےہماری اپیل ہے کہ خدارا لیوہز کو پولیس میں ضم کرنےسے پہلے ایک دفعہ پھر اپنے فصلے پر نظرثانی کرے. بلوچستان میں پولیس اور لیوہز کی کارکردگی کا باقاعدہ جائزہ لیاجاۓ .کہ صوبے میں کس کی کارکردگی تسلی بخش ہے. کس کےاہریا میں کرائم کی ریشو کم ہے. یقینن آپکو ہر لحاظ سے لیوہز کی کارکردگی تسلی بخش ملےگی.
    بلوچستان نوےفصید اہریا پر بلوچ اور پھٹان قبائل آباد ہے. جس کےرسم رواج سےپولیس کےبجائے لیوہز فورس بہت زیادہ واقف ہے. ہہ لیوہز کو پولیس میں ضم کرنے کا ایک ناکام تجربہ 2006 میں کیاگیاہے. جومکمل ناکامی سےدوچار ھوا .اور پیپلز گورنمنٹ کےآتے ہی لیوہز فورس کو دوبارہ پرانی حالت میں ؤآپس بحال کیا گیا. خدارا لیوہز کو پولیس میں ضم کرنے کےبجائے ان کو جدید ٹرہئنگ دی جاۓ جدید سازوسامان اسلحوں سے لیس کیاجائے..فورس کےاندر نۓنۓ آسامیاں پیدا کۓجائے.اس پر ہرعلاقے کےنوجوانوں کو خدمت کرنے کا موقع دیاجائے.پھر رزلٹ آپ دیکھ لیں.لیؤہز کو پولیس میں ضم کرنے کااقدام سنگین غلطی ھوگی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close