بلوچستان بورڈکو شدیدمالی مشکلات سے دوچارہونے کاخدشہ

0

- Advertisement -

کوئٹہ(رپورٹ: یحییٰ ریکی)کروناکے دوران طویل لاک ڈاﺅن کی وجہ سے تمام معاملات درہم برہم ہوگئے ،صورتحال برقراررہی توآنیوالے دنوں میں بلوچستان بورڈکو شدیدمالی مشکلات سے دوچارہونے کاخدشہ ہے ۔تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے دوران طویل لاک ڈاﺅن کی وجہ سے تمام شعبہ ہائے زندگی بری ئے طرح متاثر ہوگئے ہیں ،ذرائع کے مطابق تعلیمی اداروں کی بندش کے باعث بلوچستا ن بورڈآف انٹرمیڈیٹ اینڈسیکنڈری ایجوکیشن کوئٹہ میں بھی فیسوں کی ادائیگیوں کاسلسلہ بھی رک گیا ہے جس کی وجہ سے بورڈ میں معاملات ٹھپ ہوکررہ گئے ہیں ۔بلوچستان بورڈآفس ایک خودمختارادارہ ہے جو کہ داخلہ اورامتحانی فیس صول کرکے اپنے معاشی ودیگر معاملات خودطے کرتی ہے اس ضمن میں حکومت کی جانب سے کوئی مالی امدادنہیں کی جاتی ہے ۔ بلوچستان بورڈآف انٹرمیڈیٹ اینڈسیکنڈری ایجوکیشن کوئٹہ ملازمین کی تنخواہیں،پنشن،یوٹیلیٹی اوردیگر اخراجات سمیت چاربرانچزخضدار،تربت،لورالائی اورڈیرہ مرادجمالی کے اخراجات بھی برداشت کررہی ہے جوکہ طلباءوطالبات کی فیسوں کے ذریعے پورے کئے جارہے ہیں تاہم حالیہ کروناوائرس کی وباءکی وجہ سے فیسوں کی ادائیگیوں کاسلسلہ رک گیا ہے جس سے تمام معاملات ٹھپ ہوکررہ گئے ہیں،مذکورہ اخراجات کو پوراکرنے کیلئے بلوچستان بورڈکوماہانہ 2کروڑروپے کی ضرورت ہوتی ہے ،تاہم بورڈ کے پاس اتنی استطاعت ہے کہ وہ مزیدچار ماہ تک اخراجات برداشت کرسکتی ہے تاہم اگرحالات اسی طرح رہے توآنیوالے دنوں میں مالی معاملات کو چلانامشکل پڑجائیگا۔ذرائع کے مطابق مالی مشکلات کاازالہ کرنے کیلئے بورڈکی جانب سے گرانٹ ان ایڈکی مد میں فنڈزکی فراہمی یقینی بنانے کیلئے سیکریٹری ہائیرایجوکیشن کالجزسے رابطہ کیاجائیگا تووہ وزیراعلیٰ بلوچستان کی منظوری کے بعدمحکمہ خزانہ سے10کروڑروپے کافنڈجاری کرواسکیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.