بی اے پی نے صوبے کی ترقی کیلئے اپوزیشن کو ملکر جدوجہد کی دعوت دیدی

0

 

- Advertisement -

کوئٹہ بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل سینیٹر منظور خان کاکڑ نے اپوزیشن جماعتوں کو صوبے کی تعمیر وترقی کے لئے آگے آنے کی دعوت دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعلی جام کمال کی قیادت میں مخلوط صوبائی حکومت صوبے کے دیرینہ مسائل کے حل کے لئے عملی اقداما ت اٹھارہی ہے اپوزیشن اراکین کی تنقید تعمیر ی نہیں تخریبی ہے وہ تنقید برائے تنقید کا سلسلہ ختم کرتے ہوئے حقیقت پسندی کا مظاہرہ کریں۔حقیقت یہ ہے کہ بلوچستان کو صوبے کا درجہ ملنے کے بعد گزشتہ چالیس سالوں کے دوران اتنا کام نہیں ہوا جتنا کام موجودہ حکومت نے دو سال کے عرصے میں کیا ہے وزیراعلی کی قیادت میں کابینہ شامل صوبائی وزرا،اتحادی جماعتیں اور دیگر کابینہ اراکین کی کارکردگی بھی قابل ستائش ہے جس کی جتنی تائید کی جائے کم ہے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر منظور خان کاکڑ نے کہا کہ بلوچستان کو اللہ تبارک و تعالی نے وسائل دیئے ہیں لیکن افسوس کہ ماضی میں ان وسائل کو صوبے کی تعمیر وترقی کے لئے موثر انداز میں بروئے کار نہیں لایا جاسکا اس بات کارکریڈٹ موجودہ عوامی حکومت کو جاتا ہے کہ اس نے قلیل عرصے میں صوبے کے دیرینہ مسائل کے حل اور وسائل کے تحفظ کے لئے عملی اقدامات اٹھائے نہ صرف صوبے کے وسائل میں اضافے کے لئے خاطرخواہ کام کیاجارہا ہے۔بلکہ اس ضمن میں وفاقی سطح پر بھی بلوچستان کا موقف موثر انداز میں پیش کیا جارہا ہے بلوچستان عوامی پارٹی اور دیگر اتحادی جماعتوں کے قائدین پارلیمنٹ کے فلور پر صوبے کے مسائل اجاگر کررہے ہیں ہمارا ہدف ایک پرامن،ترقیافتہ اور خوشحال بلوچستان ہے جس کے حصول کے لئے صوبائی حکومت موثر انداز میں کام کررہی ہے لیکن افسو س کہ ہمارے اپوزیشن کے دوستوں کو صوبائی حکومت کے تاریخی عوام دوست اقدامات نظر نہیں آرہے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن اراکین صرف پی ایس ڈی پی ہی کو بجٹ سمجھتے ہیں حالانکہ بجٹ صرف پی ایس ڈی پی کا نام نہیں ہوتا بجٹ کسی بھی حکومت کی آمدن اور اخراجات کا ایک ایسا میزانیہ ہوتا ہے جس سے حکومت کے وژن کی عکاسی ہوتی ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.