ایران کے امریکی ہوائی اڈوں پر حملے‘ 80 افراد ہلاک

عراق میں حملوں سے امریکی ہیلی کاپٹر اور سازو سامان بھی تباہ ہو گیا ۔ ایرانی میڈیا کا دعویٰ

0

عراق میں حملوں سے امریکی ہیلی کاپٹر اور سازو سامان بھی تباہ ہو گیا ۔ ایرانی میڈیا کا دعویٰ

تہران( 8 جنوری 2020ء) ایران کے امریکی ہوائی اڈوں پر میزائل سے حملے کئے گئے ہیں ۔ تفصیل کے مطابق ایرانی کی جانب سے سے عراق میں امریکی ہوائی اڈے کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ ایرانی میڈیا کے مطابق ایران کے حملوں سے امریکی ایئر بیس پر 80 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ ایران کی جانب سے امریکہ کے دو ہوائی اڈوں پر حملے کئے گئے۔
بغداد میں کئے جانے والے حملوں میں امریکی ہوائی اڈوں کو نشانہ بنایا گیا ۔ ایرانی میڈیا کا کہنا ہے کہ حملوں میں امریکی ہیلی کاپٹر اور ساز و ساما ن بھی تباہ ہو گیا ہے۔ایران کے سرکاری میڈیا کے مطابق امریکی ہوائی اڈوں پر 15 مزائل داغے گئے۔ سرکاری میڈیا کی جانب کہا گیا کہ اگر امریکہ نے ایران پر حملہ کیا تو ایران کی نظر میں امریکہ کے 100 ٹارگٹ موجود ہیں۔

- Advertisement -

جس کے بعد وائٹ ہاوس کی سیکورٹی کو سخت کردیا گیا ہے، ڈونلڈ ٹرمپ نے قوم سے خطاب بھی موخر کر دیا ہے۔ واضح رہےامریکی حملوں کے بعد ایران نے بدلہ لینے کی دھکمی دی تھی ، ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے امریکی ایئربیس پر راکٹ حملوں کے بعد ٹوئیٹر پیغام میں کہا تھا کہ ایران نے امریکہ کے بزدلانہ حملے کا متناسب جواب دے دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ جواب انہوں نے اقوام متحدہ کے چارٹر کے تحت اپنے سیلف ڈیفینس میں دیا ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ ایران نے امریکہ کی اس ایئربیس کو نشانہ بنایا ہے جہاں سے امریکہ نے ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کو نشانہ بنایا تھا۔ اپنے ٹوئیٹر پیغام میں ان کا کہنا ہے کہ ایران کی جانب سے متناسب جواب مکمل ہو گیا ہے، ہم تنازعے کو بڑھانا نہیں چاہتے نہ ہی ہم کسی قسم کی جنگ چاہتے ہیں، مگر ہم اپنے خلاف کسی بھی جارحیت کا جواب دیں گے۔
واضح رہے کہ آج صبح مغربی عراق میں امریکی فوج کے ہوائی اڈے پر 35 راکٹ میزائل داغے گئے۔ ایران کے پاسداران انقلاب کا کہنا ہے کہ انہوں نے عراق میں امریکی اڈے پر درجنوں میزائل داغے ہیں۔ عراق میں امریکہ کے فوجی اڈے عین الاسد پر 35 راکٹ میزائل داغے گئے ہیں۔ عراق میں حملوں سے قبل وائٹ ہاوس کا کہنا تھا کہ عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر حملوں سے آگاہ ہیں ۔ بیان میں کہا گیا تھا کہ صدر ٹرمپ کو حالات پر بریفنگ دی گئی ہے اور وہ اس صورت حال کی قریب سے نگرانی کر رہے ہیں اور اپنی قومی سلامتی ٹیم سے مشاورت کر رہے ہیں۔ تاہم تازہ اطلاعات کے مطابق امریکی صدر کی سکیورٹی ٹیم کے ساتھ ملاقات اختتام پذیر ہو چکی ہے، اور وزراء وائٹ ہاؤس سے جا چکے ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.