سول ہسپتال پبلک مقام ہے جہاں میڈیا کو کوریج کرنے کی آزادی حاصل ہے

بلوچستان یونین آف جرنلسٹس نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ روز سیٹلائٹ ٹاؤن بم دھماکے کے زخمیوں کو سول ہسپتال لا یا گیا جسکی کوریج کیلئے میڈیا کارکن سول ہسپتال پہنچے لیکن چند ڈاکٹروں نے ایک بار پھر صحافی برادری کے ساتھ غیر شائستہ رویہ اختیار کیا اور شعبہ حادثات میں ایک غیر متعلقہ شخص نے ڈاکٹروں سے بھی ایک قدم آگے بڑھ کر صحافی برادری کو نہ صرف کوریج سے روکا بلکہ میڈیا ورکرز اور میڈیا کو گالیاں دیں بی یو جے نے کہا کہ سول ہسپتال پبلک مقام ہے جہاں میڈیا کو کوریج کرنے کی آزادی حاصل ہے لیکن چند ڈاکٹروں کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے صحافی برادری کو اپنے فرائض منصبی میں مشکلات درپیش ہیں اسکے علاوہ ایک غیر متعلقہ شخص کا سول ہسپتال کو یرغمال بنا کر صحافیوں کو کوریج سے روکنا سول ہسپتال انتظامیہ اور محکمہ صحت کی خود مختاری پر سوالیہ نشان ہے جس کی بی یو جے سخت الفاظ میں مذمت کر تی ہے اور غیر متعلقہ شخص اور اس عمل میں شریک ڈاکٹروں کیخلاف میڈیا کی آزادی پر قد غن لگانے کے حوالے سے قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہے بیان میں کہا گیا کہ غیر متعلقہ شخص بارہا خود کو وزیر صحت کا نمائندہ بنا کر پیش کرتا رہا ہم سمجھتے ہیں کہ غیر متعلقہ شخص کے غیر مناسب رویے سے وزیر صحت اور محکمہ صحت کا کوئی تعلق نہیں ہے بی یو جے امید رکھتی ہے کہ وزیر صحت اور محکمہ صحت غیر متعلقہ شخص کے اس رویے کا از خود نوٹس لے کر کارروائی عمل میں لائی جائے گی بیان میں کہا گیا کہ بلوچستان حکومت اور محکمہ صحت وضاحت کرے کہ سرکاری طور پر سرکاری ہسپتالوں میں میڈیا کوریج پر پابندی عائد کی گئی ہے یا نہیں اگر پابندی عائد نہیں ہے تو بلوچستان حکومت غیر متعلقہ شخص اور چند ڈاکٹرز ٹولہ کے خلاف کاروائی عمل میں لائ

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close